خدا کے دن ایک ھزار سال کے برابر ھیں یا پچاس ھزار سال کے برابر ؟

0 0


سائٹ کے کوڈ
fa3868


کوڈ پرائیویسی سٹیٹمنٹ
12325

خدا کے دن ایک ھزار سال کے برابر ھیں یا پچاس ھزار سال کے برابر ؟

خدا کے دن ایک ھزار سال کے برابر ھیں یا پچاس ھزار سال کے برابر ؟
سوره حج کی آیت نمبر ۴۷ میں ارشاد ھوتا ھے : “ اور آپ کے پروردگار کے نزدیک ایک دن بھی ان کے شمار کے ھزار سال کے برابر ھوتا ھے ۔ “
سوره سجده کی آیت نمبر ۵ میں ارشاد ھوتا ھے : “ وه خدا آسمان سے زمین تک کے امور کی تدبیر کرتا ھے پھر یه امر اس کی بارگاه میں اس دن پیش ھوگا جس کی مقدار تمھارے حساب کے مطابق ھزار سال کے برابر ھوگی ۔ “
سوره معارج آیت نمبر ۴ میں ارشاد ھوتا ھے : “ جس کی طرف فرشتے اور روح الامین بلند ھوتے ھیں ، اس ایک دن میں جس کی مقدار پچاس ھزار سال کے برابر ھے ۔ “
آخر کار ، ان میں سے کون صحیح ھے ؟

دیگر زبانوں میں (ق) ترجمہ

مزید  اگر میں غسل یا وضو کے لیے وقت تنگ ہونے کی وجہ سے تیمم کروں تو کیا یہ کافی ہے؟ یا یہ کہ پھر بھی مجھے غسل یا وضو کرنا چاہئیے {حتی کہ وقت کی کمی کے فرض پر بھی}؟ مثال کے طور پر، اگر اس وقت مغرب قریب ہو اور میں نے ظہر اور عصر کی نماز ابھی نہیں پڑھی ہے اور غسل یا وضو کرنے کے لیے کافی وقت نہیں ہے تو، کیا میں تیمم کر کے پاک ہو سکتا ہوں؟ اور اس صورت میں کیا مغرب کے بعد بھی میں پاک رہوں گا؟ مذکورہ مفروضات کے پیش نظر کیا مجھے اپنی نماز دوبارہ پڑھنے کی ضرورت ہے؟
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.