کیا ایک ایسی انٹرنیٹ کی سائٹ میں سرمایه کاری کرنا جائز ھے ، جو سرمایه کار کو ھرماه ، اس کے سرمایه کا دس سے تیره فیصدی نفع ادا کرتی ھو اور کیا یه نفع حاصل کرنے میں کوئی حرج ھے ؟

0 0


سائٹ کے کوڈ
fa3252


کوڈ پرائیویسی سٹیٹمنٹ
11734

کیا ایک ایسی انٹرنیٹ کی سائٹ میں سرمایه کاری کرنا جائز ھے ، جو سرمایه کار کو ھرماه ، اس کے سرمایه کا دس سے تیره فیصدی نفع ادا کرتی ھو اور کیا یه نفع حاصل کرنے میں کوئی حرج ھے ؟

ایک انٹر نیٹ سائٹ کسی غیر ملکی کمپنی سے متعلق ھے ، میں نے اس میں اپنانام درج کرایا ھے ۔ یه کمپنی ھر ماه ، سرمایه کار کے سرمایه کا دس سے تیره فیصدی منافع اداکرتی ھے ۔ جھاں تک مجھے علم ھے ، اس کمپنی کاکام صرافی یعنی پیسوں کا لین دین ھے ، لیکن یه کمپنی ، دوسری کمپنیوں کے مانند کام نھیں کرتی ھے که جو زیاده نفع کمانے کے لئے دوسروں کو اس کا ممبر بننے پر مجبور کرتی ھیں ۔ بظاھر ، یه کمپنی سرمایه کاروں کو ادا کرنے والے نفع سے زیاده منافع کماتی ھے لیکن اضافی منافع کو بچا کے رکھتی ھے تاکه ، اگر کسی مھینے میں کمپنی کو خساره ھو ، تو اس بچائے ھوئے منافع سے اس کی تلافی کرے اور سرمایه کاروں کو نقصان سے دوچار ھونے سے بچائے ، لیکن اس کے بدلے میں اس مھینه میں آٹھ فیصدی کے بجائے صرف ڈیڑھ فیصدی منافع دیتی ھے، کیا اس قسم کی شراکت مضاربه شمار ھوتی ھے ؟ کیا اس صورت میں حاصل کیا گیا نفع شرعاً جائز ھے ؟

دیگر زبانوں میں (ق) ترجمہ

مزید  عقل، قرآن، سنت، شهود کس طرح اخلاق کے لئے منبع شمار کئے جاسکتے هیں؟
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.