نماز بہترین عمل ہے

0 0

نماز دینی اعمال میں سے بہترین عمل  ہے۔اگر یہ درگاہ الٰھی میں قبول ہو گئی تو دوسری عبادات بھی قبول ہو جائیں گی اور اگر یہ قبول نہ ہوئی تو دوسرے اعمال بھی قبول نہ ہوں گے ۔ جس طرح انسان اگر دن رات میں پانچ دفعہ نہر میں نہائے دھوئے تو اس کے بدن پرگندگی  باقی نہیں  رہتی اسی طرح پانچ وقت نماز بھی انسان کو گناھوں سے پاک کر دیتی  ہے  بہتر  ہے  کہ انسان نماز اول وقت میں پڑ ھے ۔ جو شخص نماز کو معمولی اور غیر اہم سمجھے  وہ اس شخص کے مانند  ہے  جو نماز نہ پڑھتا ھو ۔ رسول اکر م (ص) نے فرمایا ہے  :” جو شخص نماز کو اھمیت نہ دے اور اسے معمولی چیز سمجھے  وہ عذاب آخرت کا مستحق  ہے  “۔ ایک دن رسول اکرم  (ص)مسجد میں تشریف فرما تھے  کہ ایک شخص مسجد میں داخل ہوا اور نماز پڑھنے میں مشغول ھو گیا لیکن رکوع اور سجود مکمل طور پر بجانہ لایا ۔ اس پر حضور  (ص)نے فرمایا کہ : اگر یہ شخص اس حالت میں مر جائے جبکہ اس کے نماز پڑھنے کا یہ طریقہ  ہے  تو یہ ہمارے دین پر  نہیں مرے گا ۔ پس انسان کو خیال رکھنا چاہیے کہ نماز جلدی جلدی نہ پڑ ھے  اور حالت نمازمیں خدا کی یاد سے غافل نہ ہو اور خشوع و خضوع اور سنجیدگی سے نماز پڑ ھے  اور یہ خیال رکھے  کہ کس ہستی سے کلام کر رہا  ہے  اپنے آپ کو خدا وند عالم کی عظمت اور بزرگی کے مقابلے میں حقیر اور نا چیز سمجھے

مزید  قادر متعال کا وجود

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.