پاکستان کی مذہبی جماعتوں نے نیٹو کی سپلائي لائينیں کھولنے کے فیصلے پر شدید احتجاج کیا ہے

0 6

پاکستان کی مذہبی جماعتوں نے نیٹو کی سپلائي لائينیں کھولنے کے فیصلے پر شدید احتجاج کیا ہے۔ ارنا کی رپورٹ کے مطابق جماعت اسلامی پاکستان کے سربراہ منور حسن نے نیٹو کی سپلائي لائينين کھولنے کے فیصلے پر تنقید کرتےہوئے کہا ہے کہ یہ ایک غلط اقدام ہے۔

منور حسن نے کہا کہ حکومت پاکستان نے ملک کی خود مختاری اور سلامتی کو امریکہ کے ہاتھوں فروخت کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد حکومت نیٹو سپلائي لائينوں کو بند رکھ کر نیٹو کو ڈرون حملے بند کرنے پرمجبور کرسکتی تھی اور نتیجے میں عوام کو قتل عام سے بچایا جاسکتا تھا۔

جماعت اسلامی پاکستان کے سربراہ نے کہا کہ پاکستان میں امریکہ کی مداخلت ختم کرنے کا واحد راستہ امریکہ سے تعلقات منقطع کرنا ہے۔

یاد رہے جماعت اسلامی کے علاوہ دیگر اسلامی پارٹیوں نے بھی حکومت اسلام آباد کے اس فیصلے پرکڑی تنقید کی ہے اور نیٹو کی سپلائي لائنیں بحال کرنے کو پاکستان کے قومی مفادات کو نقصان پہنچانے کی کوشش قراردیا ہے۔

یاد رہے افغانستان میں نیٹو کے لئے نوے فیصد رسد پاکستان کےراستے ہی جاتی ہے۔

مزید  پاک ایران سرحد کو امن و دوستی کی سرحد میں تبدیل کرنے کا عزم
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.