تاجیکستان کی مساجد میں اذان دینے پر پابندی

جمہوریہ تاجیکستان کے دارالحکومت کے حکام نے ایک مرتبہ پھراس شہرکی مساجد میں بلند آوازسے اذان دینے پرپابندی لگادی ہے۔

رپورٹ کے مطابق تاجیکستان کے دارالحکومت کی میونسپل کمیٹی کے جدید قوانین کے مطابق یکم جولائی بروز اتوار سے اس شہرکی مساجد میں لاوڈ اسپیکروں سے اذان دینے پر پابندی ہے۔

دارالحکومت دوشنبہ کی میونسپل کمیٹی نے اس فیصلے کی وجہ یہ بیان کی ہے کہ اونچی آواز کےساتھ اذان سے دیگرادیان کے پیروکاروں اورقائدین کواذیت ہوتی ہے لہذا اذان کی آواز فقط مسجد کےاحاطہ کے اندررہنی چاہیے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق دوشنبہ کے میئر”محمد سعید عبیداللہ اف” کے اس جدید قانون کے مطابق آئندہ چند دنوں کے دوران تاجیکستان کے دارالحکومت کی مساجد میں کیمرے نصب کیے جائیں گے اورماہرین کے بقول مساجد میں ان کیمروں کونصب کرنے کا مقصد جوانوں اور نوجوانوں کومسجد میں آنے سے روکنا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.