یه جو بعض اوقات دعویٰ کیا جاتا ھے که: “حضرت عیسیٰ سے پھلے {حضرت عیسیٰ کے علاوه} تمام انبیاء گناه کے مرتکب ھوئے ھیں اور پیغمبر اسلام کا کوئی معجزه نھیں تھا اور قرآن بھی انجیل کی نقل ھے” کیا یه کھنا صحیح ھے؟


سائٹ کے کوڈ
fa3942


کوڈ پرائیویسی سٹیٹمنٹ
13164

یه جو بعض اوقات دعویٰ کیا جاتا ھے که: “حضرت عیسیٰ سے پھلے {حضرت عیسیٰ کے علاوه} تمام انبیاء گناه کے مرتکب ھوئے ھیں اور پیغمبر اسلام کا کوئی معجزه نھیں تھا اور قرآن بھی انجیل کی نقل ھے” کیا یه کھنا صحیح ھے؟

میں ایک مسلمان طالب علم ھوں اور ملک سے باھر ھوں۔ میرا ایک دوست اور ھم جماعت عیسائی ھے اور مجھ سے اسلام کے بارے میں کچھ سوالات پوچھتا ھے۔ وه دعویٰ کرتا ھے که قرآن مجید انجیل کی نقل ھے اور اس میں کوئی نئی بات نھیں ھے۔ وه یه بھی دعویٰ کرتا ھے که پیغمبر اسلام {ص}کا کوئی معجزه نھیں تھا اور حضرت عیسیٰ سے پھلے تمام پیغمبر گناه کے مرتکب ھوئے ھیں، صرف حضرت عیسیٰ مرتکب گناه نھیں ھوئے ھیں۔ اس کے سوالات کا ایک منطقی جواب کیسے دیا جاسکتا ھے؟

دیگر زبانوں میں (ق) ترجمہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.