کیا حائض عورت کا رمضان المبارک میں بھى قرآن پڑھنا مکروه هے؟

0 0

حائض عورت کے قرآن پڑھنے کا مکروه هونے کے سلسله میں رمضان المبارک کے مهنه میں یا اس کے علاوه کسى وقت میں کوئى فرق نهیں هےـ

حضرت امام خمینى نے اس سلسله میں فرمایا هے:” حائض عورت کے لئے قرآن مجید کا پڑھنا ، اپنے ساتھـ رکھنا اور اپنے بدن کے کسى حصه کو قرآن مجید کے حایشه سے مس کرنا مکروه هےـ”[1]

البته قابل توجه بات هے که عبادات میں کراهت ،کم تر ثواب کے معنى میں هےـ اس لحاظ سے اگر حائض عورت رمضان المبارک کے مهینه میں قرآن مجید کى تلاوت کرے ، تو اسے ثواب ضرور ملیں گے لیکن اس کے ان ثوابوں کى مقدار اس سے کم هے، جو وه حیض سے پاک هونے کى حالت میں رمضان المبارک میں تلاوت کرےـ



[1] ـ توضیح المسائل (المحشىللا امام الخمینی)،ج1،ص269، مسالھ477.

مزید  مھربانی کرکے میرے لئے ایک ایسی کتاب کی معرفی کیجئے جس میں مستحبات ، مکروھات اور روزمره اعمال کے بارے میں لکھا گیا ھو۔
تبصرے
Loading...