عهد پر عمل نه کر نے کا کفاره کیا هے؟

0 0

اگر کو ئی شخص (مراجع عظام کی تقلید کی توضیح المسائل میں درج شرائط کے ساتھـ )[1] خداوند متعال کے ساتھـ عهد کرے اور اس پر عمل نه کرے (اس میں کوئی فرق نهیں هے که کسی کام کو انجام دینے کے لئے عهد کیا هو یا کسی کام کو ترک کر نے کے لئے) اسے کفاره دینا چاهئے ، یعنی ساٹھـ فقیروں کو پیٹ بھر کر کھانا کھلائے ، یا دو مهینے روزه رکھے[2]یا ایک غلام کو آزاد کرے- [3]



[1]  مثلاً عهد را حج امر سے متلق هے اور باپ کی ممانعت سے منعقد نهیں هوتا هے اور اس کے لئے صیغه ضروری هے یعنی عهد کر نے والا کهے : میں نے خدا کے ساتھـ عهد کیا هے که فلاں نیک کام کو انجام دوں گا –” لیکن اگر صیغه نه پڑھے ، یا وه کام شرعاً مطلوب نه هو تو اس کے عهد کا کوئی اعتبار نهیں هے – ملا حظه هو: مراجع کی توضیح المسائل ج٢، ص٦٢٢مسئله نمبر ٢٦٦٧و ٢٦٦٨-

[2] – ان دنوں میں سے ٣١دن پے درپے روزه رکھے ، لیکن باقی بچے دنوں یعنی ٢٩ دنوں کو فاصله کے ساتھـ روزه رکھـ سکتا هے-

[3] – مراجع کی توضیح المسائل ،ج٢،ص٦٢٢،مسئله٢٦٦٩-

مزید  علم، جهاں پر بھی نظر ڈالتا هے، بعض ایسی چیزوں کو پاتا هے جو کسی جادو یا سحر پر مشتمل نهیں هوتی هیں، اس بنا پر کیا خداوندمتعال فطری قوانین کی رعایت کرتا هے؟ هم اپنی موجوده زندگی میں کسی سحر و جادو کو واقع هوتے هوئے نهیں دیکھتے هیں،کسی پانی میں شگاف پیدا هوتے نهیں دیکھتے هیں، کسی کنواری کو بچے کو جنم دیتے هوئے نهیں دیکھتے هیں، کسی چاند کو دو ٹکڑے هوتے هوئے اور کوئی معراج واقع هوتے هوئے نهیں دیکھتے هیں۔ انسان همیشه ماضی اور مستقبل کے واقعات کے بارے میں جادو تصور کرتے هیں تاکه وه اپنی زندگی بسر کرنے والی دنیا میں اسے معنی بخشیں۔ به الفاظ دیگر، چونکه میں نے ان اتفاقات کو رونما هوتے هوئے نهیں دیکھا هے، پس کسی جادوگر نے انهیں انجام دیا هے۔ کیا اس کے یه معنی نهیں هو سکتے هیں؟
تبصرے
Loading...