2022 - 09 - 26 ساعت :
دسته‌بندی نشده

امریکہ مسلمانوں میں تفرقہ انگيزی کے درپئے

2020-07-10 04

یوروسیویک ریسرچ فاونڈیشن کے سربراہ پیروز مجتھد زادہ نے کہا ہےکہ امریکہ خلیج فارس کے نام اور تین ایرانی جزیروں کے بارے میں اختلافات پیدا کرکے خلیج فارس کے علاقے پر تسلط قائم کرنا چاہتا ہے۔

پیروز مجتھد زادہ نے خلیج فارس کے ماحولیات اور جیوپالیٹیکل پوزشن کے زیر عنوان جزیرہ قشم میں منعقدہ عالمی کانفرنس میں کہا کہ امریکہ نے شیعہ اورسنی مسلمانوں کے درمیان تفرقہ پھیلانے کے لئے انتھا پسند وہابی نظریہ اسلام کو پھیلانا شروع کردیا ہے اور ساری دنیا میں وہابی انتھا پسند نظریات کو پھیلانے کی کوششیں کررہا ہے۔

اس محقق پروفیسر نے کہا کہ امریکہ نے شیعہ مسلمانوں کو دشمن کے طور پر پیش کرنے کی سازش رچی ہے اور یہ امریکی سی آئي اے ہی تھی جس نے القاعدہ اور طالبان کو جنم دے کرحقیقی اسلام سے مقابلہ کرنے کے لئے وہابی انتھا پسند نظریات کو ہوا دی تھی۔

انہوں نے خلیج فارس میں آلودگي کے بارے میں کہا کہ اس سمندر میں جب سے امریکہ اور اسکے اتحادیوں کے جنگي جہاز آئے ہیں آلودگي بڑھتی ہی جارہی ہے اور آلودگي کا ایک اور سبب خلیج فارس کے عرب ملکوں کی جانب سے پانی میٹھا کرنے کے کارخانوں کی بڑی تعداد بھی ہے۔

خلیج فارس کے ماحولیات اور جیو پالیٹیکل پوزیشن کانفرنس بدھ اور جمعرات کو جزیرہ قشم میں منعقد ہوئي۔ اس کانفرنس میں ایرانی اور غیر ملکی دانشوروں نے شرکت کی۔ 

شجاعت علی

Loading...
  • ×
    ورود / عضویت